ہمیں فالو کریں
Banner
وزیر نیوز۔

عبداللہ بن زاید کی برج ٹاؤن میں بارباڈوس کے وزیر اعظم سے ہوئی ملاقات کی…..تعاون کے تعلقات اور موسمیاتی فائل سے متعلق ہوئی گفتگو

هفته 30/9/2023

وزیر برائے خارجہ امور عزت مآب شیخ عبداللہ بن زاید آل نهيان اور بارباڈوس کے وزیر اعظم میا امور موٹلی نے دونوں ممالک کے درمیان تعاون کے تعلقات، اور تمام شعبوں خصوصاً آب و ہوا اور قابل تجدید توانائی میں ان کو تقویت دینے سے متعلق دستیاب مواقع میں سرمایہ کاری کرنے کے طریقوں پر تبادلہ خیال کیا۔
یہ بات عزت مآب کی جناب میا امور موٹلی کے ساتھ ملاقات کے دوران سامنے آئی، جس میں وزیر خارجہ کیری سائمنڈز طور پر موجود تھے۔ واضح رہے کہ یہ جمہوریہ بارباڈوس کے آپ کے ورکنگ دورے کے ایک حصے کے ضمن میں تھا۔
عزت مآب اور بارباڈوس کے وزیر اعظم نے دونوں ممالک کے درمیان اقتصادی، سیاحت اور تجارت سمیت کئی شعبوں میں دوطرفہ تعاون کو بڑھانے کے طریقہ کار پر تبادلہ خیال کیا تاکہ پائیدار ترقی کے حصول کے لیے ان کی کوششوں کی حمایت کی جا سکے۔
عزت مآب نے جناب میا امور موٹلی کو اقوام متحدہ کے فریم ورک کنونشن آن کلائمیٹ چینج (COP 28) کے لیے فریقین کی کانفرنس کی میزبانی کے لیے متحدہ عرب کی تیاریوں، تقریب کے ایجنڈے اور متحدہ عرب کی کانفرنس کی صدارت کی ترجیحات کے بارے میں بھی خبر دی۔ خاص طور پر، توانائی کی منصفانہ منتقلی کے حصول کی حمایت کرنے کے لیے آب و ہوا کی سرگرمیوں کے لیے فنانسنگ کی فراہمی کو یقینی بنانے کے لئے کی جانے والی کوشش کے بارے میں۔
عزت مآب شیخ عبداللہ بن زید آل نہیان نے اس بات پر زور دیا کہ پائیدار ترقی تمام ممالک کے لیے ایک ترجیح اور لوگوں کا فطری حق ہے، اور اس کے حصول کے لیے موسمیاتی کارروائی کے دوران ایک معیاری تبدیلی کی ضرورت ہے۔ نیز ماحولیاتی غیرجانبداری تک پہنچنے کے مقصد کے ساتھ عالمی کوششوں کو متحرک کرنے کی ضرورت ہے۔ مزید براں اس مقصد کی حمایت میں اختراعی اقدامات کو اپنانے کے لیے کام کرنے کے بھی ضرورت ہے۔
عالی ذی وقار نے COP 26 سے بارباڈوس کی وزیر اعظم محترمہ میا امور موٹلی کی قیادت میں برج ٹاؤن انیشیٹو کے لیے متحدہ عرب امارات کی حمایت پر بھی زور دیا، تاکہ موسمیاتی ایکشن کے لیے بین الاقوامی مالیاتی رسائی تک رسائی حاصل کی جا سکے، خاص طور پر ان ممالک کے لیے جو موسمیاتی تبدیلی سے سب سے زیادہ خطرے سے دوچار ہیں جو کہ اس کے اثرات پر اس کے ردعمل کی حمایت کرنے میں معاون ہوگا۔ اس دوران آپ نے موسمیاتی فائل میں بین الاقوامی مالیاتی اصلاحات کے مسائل کو حل کرنے کے لیے عالمی کوششوں کو مضبوط بنانے کی اہمیت کی طرف بھی اشارہ کیا۔
عالمی موسمیاتی کارروائی میں بارباڈوس کے طرف سے انجام دئے گئے اہم اقدامات کو سراہتے ہوئے عالی ذی وقار نے ریپبلک آف بارباڈوس کی جانب سے اقوام متحدہ کے فریم ورک کنونشن آن کلائمیٹ چینج (COP 28) میں فریقین کی کانفرنس میں شرکت کے لیے اپنی خواہش کا اظہار کیا۔
عزت مآب شیخ عبداللہ بن زاید ال نہیان اور عزت مآب میا امور موٹلی کے درمیان ہونے والی بات چیت میں علاقائی اور بین الاقوامی سطح پر ہونے والی پیش رفت کے علاوہ مشترکہ دلچسپی کے متعدد امور پر بھی بات چیت کی گئی۔
عالی ذی وقار نے دونوں ممالک کے درمیان ممتاز تعلقات اور ان کو مضبوط بنانے اور تمام شعبوں میں مشترکہ تعاون کے امکانات کو آگے بڑھانے کے لیے دستیاب مواقع میں سرمایہ کاری کی اہمیت پر زور دیا۔
اپنی جانب سے محترمہ میا امور موٹلی نے اقوام متحدہ کے فریم ورک کنونشن آن کلائمیٹ چینج (COP 28) کے فریقین کی کانفرنس کی میزبانی کے دوران متحدہ عرب امارات کی تمام قابلیت اور صلاحیتوں کے ساتھ عالمی موسمیاتی کارروائی کی قیادت پر اپنے اعتماد کا اظہار کیا۔ آپ نے عالمی سطح پر قابل تجدید اور صاف توانائی کے شعبے میں متحدہ عرب امارات کے اہم اقدامات اور موسمیاتی غیرجانبداری کے حصول کے لیے اس کی ممتاز اور اختراعی حکمت عملی کو خوب سراہا۔
میٹنگ میں ثقافتی امور اور عوامی سفارت کاری کے معاون وزیر عزت مآب عمر سيف غباش اور وزارت خارجہ میں اقتصادی اور تجارتی امور کے معاون وزیر عزت مآب سعید مبارک الہاجری نے بھی شرکت کی۔
وزیر خارجہ عزت مآب شیخ عبداللہ بن زاید آل نھیان اس سے پہلے ایک دورے کے آغاز میں بارباڈوس پہنچے تھے جس میں لاطینی امریکہ اور کیریبین ممالک کے متعدد ممالک شامل تھے۔
یہ دورہ متحدہ عرب امارات اور لاطینی امریکہ اور کیریبین کے ممالک کے درمیان دوستانہ تعلقات کو مضبوط کرنے کی خواہش کے فریم ورک کے ضمن میں ہے۔ ساتھ ہی ساتھ تمام شعبوں بالخصوص اقتصادی اور آب و ہوا میں مشترکہ تعاون کے امکانات کو ترقی دینے اور آگے بڑھانے کے لیے دستیاب مواقع کا جائزہ لینا بھی ہے۔ واضح رہے کہ یہ اگلے نومبر اور دسمبر میں ایکسپو سٹی دبئی میں اقوام متحدہ کے فریم ورک کنونشن آن کلائمیٹ چینج (COP 28) کے فریقین کی کانفرنس کے اٹھائیسویں اجلاس کی میزبانی کے لیے متحدہ عرب امارات کی تیاریوں اور اس عالمی آب و ہوا کی کارروائی کی رفتار کو تیز کرنے کی اہمیت کے ساتھ موافقت میں ہے جو پائیدار اقتصادی ترقی کے راستوں کو آگے بڑھانے کے لیے ایک ستون کی حیثیت رکھتا ہے۔

ٹول ٹپ